96

کالاش برادری سے تعلق رکھنے والے مجبور شخص کا مخیر حضرات سے امداد کی اپیل

چترال(محکم الدین) گردش زمانہ اور حالات و واقعات بدلنے میں دیر نہیں لگتی۔ ایسے ہی اچانک رنج و الم کے شکار بمبوریت کے مقام بتریک کے ایک کالاش خاندان نے تمام مسلم اور غیر مسلم مخیر حضرات سے امداد کی اپیل کی ہے کہ اُنہیں سہارا دے کر مزید بکھرنے سے بچایاجائے۔ خاندان کے واحد کفیل افضل خان کے مطابق اُن کے خاندان پر اُفتاد اُس وقت آن پڑی جب اُن کے بڑے بھائی پارسل خان جنگل کے ایک تنازعے میں ایک شخص کے قتل کے مجرم ٹھہرے اور اسے جیل میں ڈال دیا گیا۔اس کا صدمہ برداشت نہ کرتے ہوئے انکی والدہ اور بہن بیمار پڑ گئے اور اسی غم میں فوت ہو گئے۔ ماں، بہن کی علالت، تدفین کی رسومات کی ادائیگی، بھائی کیلئے وکلاء کی فیس اور گھر کے اخراجات ناقابل برداشت تھے اس لئے گاؤں کا ایک شخص اس شرط پر سات لاکھ روپے قرض دینے پر راضی ہوا کہ چودہ من اخروٹ جس کی مالیت ایک لاکھ 80ہزار روپے بنتی ہے سالانہ سود پر ادا کرنے پڑیں گے اور اگر دو سال ادائیگی نہ ہو ئی تواصل زر اور سود کے بدلے میں وہ میری ایک قطعہ زمین پر قبضہ کریں گے۔ مجبوری اتنی ناقابل برداشت تھی کہ مجھے یہ شرائط ہر صورت ماننے پڑے اور دو سال مشکل سے سو د ادا کرتا رہا لیکن گذشتہ دو سالوں سے سود کی ادائیگی نہ ہونے کے سبب قرض خواہ اصل زر اور سود سمیت 9 لاکھ کی مجموعی قرض کے عوض زمین پر قبضہ کرنا چاہتا ہے۔ ایک طرف قرض خواہ کا بوجھ اور دوسری طرف بڑے بھائی پارسل خان کی جیل میں ہارٹ اٹیک سے ہلاکت نے بیوہ اور یتیم بچوں کی مستقل ذمہ داری نے خاندان کو مزید معاشی مسائل سے دوچار کردیا ہے اور وہ انتہائی طور پر کسمپرسی کی حالت سے دوچار ہیں۔ مجبوری اور غم و صدمے سے نڈھال افضل خان نے اشک بار آنکھوں سے تمام مخیر حضرات سے اپیل کی ہے کہ ان کے مجبور خاندان کو مزید مصائب سے دوچار ہونے سے بچانے کیلئے قرض کے 9لاکھ روپے کی ادائیگی میں اُن کی مدد کریں۔ انہوں نے کہا کہ ان کا گزارہ محنت مزدوری پر ہے اور وہ لاہور کے مختلف فیکٹریوں میں مزدوری کرتے ہیں جس سے اُن کے گھر کے اخراجات ہی پورے نہیں ہو رہے۔ ایسے میں قرض کی بڑی رقم ادا کرنا اُن کیلئے ایک کوہ گران ہے۔ انہوں نے توقع ظاہر کیا ہے کہ خدا کی زمین اچھے اور رحم دل لوگوں سے خالی نہیں اور ضرور مخیر بہن بھائی اُن کے خاندان کے بیوہ یتیم بچوں کو اس مصیبت سے نکالنے کیلئے مد د کریں گے۔ واضح رہے کہ پارسل خان کو مقامی عدالت نے جرم ثابت ہونے پر موت کی سزا سنائی تھی اور وہ جیل میں سزا کاٹنے کے دوران حرکت قلب بند ہونے سے کچھ عرصہ قبل انتقال کر گئے تھے۔ ان کی بیوہ یتیم بچے اور خاندان کے دوسرے افراد مشکل میں ہیں۔ مخیر حضرات درج ذیل موبائل نمبر
9701411-0344،03449702200 اور 03424187316 پر رابطہ کرکے خاندان کی مدد کر سکتے ہیں۔
اس رپورٹ کے حوالے سے مقامی پولیس نے سوشل میڈیا کے ذریعے ایک پیغام میں وضاحت کی ہے کہ پارسل خان نامی شخص کو مذکورہ مقدمے میں عدالت سے سزا ہوئی ہے تاہم انہوں نے سود کی بنیاد پر قرض دینے کی بابت انکوائری کرنے کا عندیہ دیا ہے۔