127

مڈکلشٹ میں دوسرا سنو سپورٹس فیسٹیول شروع ہو گیا، بھاری تعداد میں سیاحوں کی شرکت

چترال (محکم الدین)چترال کے انتہائی خوبصورت سیاحتی مقام مڈک لشٹ میں تین روزہ سنو سپورٹس فیسٹول کا آغاز ہو چکا ہے۔ یہ فیسٹول ہندوکُش سپورٹس کلب کے زیر اہتمام ٹوارزم کارپوریشن خیبر پختونخوا، گلاف، منسٹری آف اینوائرنمنٹ، سیکی فیڈریشن اور ونٹر سپورٹس فیڈریشن کے تعاون سے منعقد کیا جا رہا ہے۔ فیسٹول میں بڑی تعداد میں ملکی، غیر ملکی اور مقامی کھلاڑی حصہ لے رہے ہیں اور ملک کے کئی شہروں سے سیاح اسکیٹنگ اور مدک لشٹ کے خوبصورت نظاروں سے لطف اندوز ہونے کیلئے یہاں پہنچ گئے ہیں۔ فیسٹول کے منتظم و صدر ہندو کش سنو سپورٹس ایسو سی ایشن شہزادہ ہشام الملک نے میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ جوائنٹ سلالیم میں مقامی کھلاڑی پہلی مرتبہ اپنے فن کا مظاہرہ کر رہے ہیں، اسی طرح مقامی طور پر لکڑی سے تیار شدہ سامان سے سکیٹنگ، آئس سکیٹنگ، آئس ہاکی اور اسکیٹنگ کے مقابلے شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مڈک لشٹ نہایت ہی خوبصورت اور پُر امن علاقہ ہے اور لوگ انتہائی طور پر تعاؤن کرنے والے ہیں، اسی لئے ہم نے گذشتہ سال کئی عرصے بعد اس کھیل کو دوبارہ زندہ کیا۔ یہاں کے مقامی کھلاڑیوں کو نلترگلگت لے جا کر ٹریننگ دی،آج وہ بہترین کھلاڑی ہیں اور دوسرے لڑکوں کو تر بیت دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ سال چار سو سے زیادہ مقامی کھلاڑیوں نے اس میں حصہ لیا تھا، امسال پچیس سال سے کم عمر کھلاڑیوں کو موقع دیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انٹر نیشنل کھلاڑی شوقیہ طور پر اس میں حصہ لے رہے ہیں۔ انہوں نے ٹوارزم کارپوریشن خیبر پختونخوا، سیکی فیڈریشن، ونٹر سپورٹس فیڈریشن، منسٹری آف اینوائرنمنٹ، گلاف،ڈپٹی کمشنر چترال اور مقامی کمیونٹی کا شکریہ ادا کیاکہ اُن کے تعاؤن سے فیسٹول کا انعقاد ممکن ہوا۔

انہوں نے کہا کہ ہم مڈک لشٹ میں برف سے تعلق رکھنے والے تمام کھیلوں کو ترقی دینا چاہتے ہیں تاکہ یہاں سے اعلی صلاحیتوں کے حامل کھلاڑی پیدا ہوں اور وہ ملکی و بین الاقوامی کھیلوں میں حصہ لے سکیں۔ انہوں نے کہا کہ اسکیٹنگ کیلئے سامان ونٹرسپورٹس فیڈریشن نے اُنہیں مہیا کی ہے۔ صدر لوکل کونسل نذیر احمد نے کہاکہ کئی عرصے بعد اس کھیل کو مڈک لشٹ میں دوبارہ زندہ کیا گیا ہے اور یہ ہندو کُش سپورٹس کلب اور موجودہ حکومت کی طرف سے سیاحت کو فروغ دینے ی کوششوں کا نتیجہ ہے۔ اس کھیل کی بدولت ملکی اور بین الاقوامی سطح پر اعلی شخصیات اور سیاح آتے ہیں، ہمارے مسائل سے اُ نہیں آگاہی ہوتی ہے۔ خصوصاً سردیوں میں مڈک لشٹ کے راستے بند ہوتے ہیں اور زیادہ تر مقامی لوگ اپنی مدد آپ کے تحت اس کی صفائی کرتے ہیں۔ اس فیسٹول کی وجہ سے روڈ کھلا رکھنے کیلئے انتظامیہ نے اقدامات کئے۔ انہوں نے کہا کہ کھیل ہمارے لئے نیا نہیں ہے، ہمارے آباو اجداد انگریز آفیسروں کے ساتھ یہاں کھیلا کرتے تھے لیکن بعد ازاں اس کی سرپرستی نہ ہونے کے باعث یہ منقطع رہا، اب اس کی دوبارہ بحالی سے رونقیں بحال ہوئی ہیں اور اس کا سہرا شہزادہ ہشام الملک صدر ہندوکُش سپورٹس کلب کے سر ہے۔ انہوں نے کہا کہ سیاحوں کی آمد سے مقامی مصنوعات کی خریداری سے مثبت اثرات رونما ہو رہے ہیں۔ ہوم گیسٹ ہاوسزسے لوگوں کی آ مدنی ہو رہی ہے اور کاروبار کو فروغ ملا ہے نیز مختلف سیاحوں سے تعلقات استوار ہو رہے ہیں جن کی بدولت نوجوانوں کی ذہنی اور فکری صلاحیتوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے اس علاقے کو سیاحتی مقام قرار دے کر اس کی سڑکوں اور دیگر سیاحتی انفراسٹرکچر کی تعمیر کیلئے پانچ ارب روپے کی منظوری دی ہے جس کیلئے ہم ان کے شکر گزار ہیں۔