137

اسماعیلی کمیونٹی کے رضاکاروں نے اپنی مدد آپ کے تحت بلچ روڈ کی مرمت کی

چترال(گل حماد فاروقی)اسماعیلی کمیونٹی کے درجنوں رضاکاروں نے گرم چشمہ روڈ کی اپنی مدد آپ کے تحت مرمت کی۔ یہ سڑک پہلے کھنڈرات کا منظر پیش کررہا تھا۔اسماعیلی کمیونٹی کے رضاکاروں نے گذشتہ روز بلچ روڈکے کھنڈوں پر مٹی ڈالکر اسکی ضروری مرمت کی۔بلچ روڈ ایک عرصے خستہ حالی کا شکار ہے اور اہلیان علاقہ کی طرف سے بار بار حکام سے مطالبہ کرتے رہے ہیں کہ اس روڈ کی حالت بہتر بنائی جائے تاہم اس جانب کوئی توجہ نہیں دی جا رہی۔ اسمٰعیلی کونسل کے رضاکاروں نے اپنی مدد آپ کے تحت اس سڑک کی ضرور ی مرمت کا بیڑا اٹھایا اور درجنوں رضاکاروں نے اس عمل میں حصہ لیا۔
ہمارے نمائندے سے باتیں کرتے ہوئے شہزادہ رضا ء الملک نے کہا کہ ہم ان رضاکاروں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں جو اپنی مدد آپ کے تحت سڑک کی مرمت کرتے ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ چیو پل کے قریب سڑک دریا کی جانب ٹوٹ چکا ہے جہاں پہلے بھی ایک حادثہ پیش آیا تھا اور محکمہ مواصلات یعنی کمیونیکیشن اینڈ ورکس نے تین ماہ گزرنے کے باوجود اس کی مرمت کیلئے کوئی قدم نہیں اٹھایا۔انہوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ ایسا نہ ہو کہ سڑک تو بلچ سینگور میں مقیم اسماعیلی رضاکاروں نے مرمت کی مگر اس کی مرمت کا فنڈ بھی C&W والے نکال کر کسی ٹھیکیدار کے نام نہ کردے اور اپنی کمیشن کیلئے سرکاری خزانے کو ٹیکہ نہ لگادے۔


محکمہ سی اینڈ ڈبلیو کے روڈ کولی گھر بیٹھے تنخواہیں لے رہے ہیں اور سڑک کی مرمت کیلئے ایک دن بھی ڈیوٹی نہیں کرتے یہی وجہ ہے کہ اس سڑک کے بیچ میں اتنے بڑے کھڈے بن چکے تھے کہ مریض ہسپتال پہنچنے سے پہلے جان بحق ہونے کا خطرہ تھا۔ سڑک کی خرابی کی وجہ سے آئے روز حادثات کا بھی خدشہ تھا تو اسماعیلی رضاکاروں نے اپنی مدد آپ کے تحت سڑک میں مٹی ڈال کرے اسے ہموار کیا تاکہ اس پر گاڑیاں آرام سے جاسکے۔
مقامی لوگوں نے ان رضاکاروں کی اس اقدام کو نہایت سراہا اور صوبائی حکومت کے ساتھ وفاقی حکومت پر بھی تنقید کی کہ کئی سالوں سے یہ سڑک خراب پڑا ہے مگر اس کی مرمت کیلئے حکومت نے کوئی قدم نہیں اٹھایا۔
شہزادہ رضا ء الملک نے بلچ میں ایک بینر بھی آویزاں کیا ہے جس میں انہوں نے کور کمانڈر پشاور، انسپکٹر جنرل فرنٹیرکور، کمانڈنٹ چترال سکاؤٹس اور آرمی چیف سے اپیل کی ہے کہ وہ اس سڑک کو ایف ڈبلیو او یعنی فوجی تعمیراتی کمپنی کے ذریعے جلد از جلد بنوائے تاکہ کسی بڑے حادثے سے بچا جاسکے۔
اسماعیلی رضاکاروں نے اپر چترال کے یارخون ویلی میں اپنی مدد آپ کے تحت سڑکوں کی مرمت کرکے انکی حالت بہتر بناڈالا۔