193

چترال شندور اور چترال گرم چشمہ روڈ نیشنل ہائی ویز اتھارٹی کے حوالے، خصوصی تقریب ڈی سی آفس میں منعقد ہوئی

چترال(بشیرحسین آزاد)ڈپٹی کمشنر چترال کے دفتر میں چترال شندور اور چترال گرم چشمہ روڈ کو صوبائی حکومت کے سی اینڈ ڈبلیو ڈیپارٹمنٹ سے وفاقی حکومت کے نیشنل ہائی وے اتھارٹی کے حوالے کرنے کی تقریب منعقد ہوئی جس میں کمشنر ملاکنڈ ڈویژن سید ظہیر الاسلام شاہ اور وزیر اعلیٰ کے معاؤن خصوصی وزیر زادہ کی موجودگی میں دونوں محکمہ جات کے افسران نے دستاویز ایک دوسرے کے حوالے کئے۔ اس موقع پر کمشنر ملاکنڈ ڈویژن نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں میں ناقص میٹریل، معیار اور مقدار میں کم اور بروقت تکمیل میں غیر ضروری تاخیر آئندہ کے لئے برداشت نہیں کیا جائے گا اور مرتکب افسران کے خلاف کیسز نیب میں بھیج دئیے جائیں گے اور کوئی افسر کڑی احتساب سے نہیں بچ سکے گا چاہے کسی کا تعلق صوبائی حکومت سے ہو یا وفاق سے۔ انہوں نے کہاکہ ڈویژنل سطح پر مانیٹرنگ سسٹم کے تحت تمام وفاقی اور صوبائی محکمہ جات کے کاموں کی نگرانی کا اختیار انہیں حاصل ہے اور آئندہ کوئی افسر اور اہلکاراپنی سستی، کاہلی، غفلت، بدانتظامی اور بدعنوانی کی سزا پانے سے نہیں بچ سکے گا۔ انہوں نے سڑکوں کی خراب صورت حال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے متعلقہ سرکاری محکمہ جات کے افسران پر زور دیاکہ وہ اپنے پیشے اور کاموں کے ساتھ انصاف کریں اور سرکاری کاموں کو بھی وہی اہمیت دیں جووہ اپنی ذاتی کاموں کو دیتے ہوئے اس کے لئے روزوشب فکر کرتے ہیں اور کم سے کم لاگت پر ذیادہ سے ذیادہ اور معیاری کام کرتے ہیں اور قوموں کی عروج کا راز اسی میں مضمر ہے کہ اس کے افسران اور اہلکار ایمانداری اور کام سے لگن کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ انہوں نے این ایچ اے کے افسران کو ہدایت کی کہ انہیں شندور اور گرم چشمہ روڈ کی صورت میں بھاری ذمہ داریاں سپرد ہوئی ہیں اور آنے والے سردیوں میں ان سڑکوں کو قابل استعمال رکھنے میں کوئی کوتاہی کا ارتکاب نہ کریں اورمینٹی ننس کے لئے چترال میں جلد از جلد دفاتر قائم کریں۔ وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی وزیر زادہ نے کہاکہ چترال کے دو اہم ترین سڑکوں کی این ایچ اے کو حوالے کرناتاریخ کا ایک سنگ میل سے کم نہیں ہے جس کے بعد ان کی تعمیر اور کشادگی میں کوئی مسئلہ باقی نہیں رہا جس کے لئے چترال کے عوام وزیر اعلیٰ محمود خان کے شکر گزار ہیں جس کی ذاتی دلچسپی کی بناء پر ہی یہ ممکن ہوا۔ ڈپٹی کمشنر چترال حسن عابد بھی اس موقع پر موجود تھے۔سی اینڈ ڈبلیو کی طرف سے ایگزیکٹو انجینئر عثمان اور این ایچ اے کی طرف سے ڈپٹی ڈائرکٹر فواد نے دستاویز پر دستخط کئے۔ چترال ڈویلپمنٹ فورم کے چیئرمین وقاص احمد ایڈوکیٹ نے سول سوسائٹی کی نمائندگی کرتے ہوئے سڑکوں کی حالت بہتربنانے کے لئے تجاویز پیش کی۔