بدھ. ستمبر 28th, 2022

چترال(چ،پ) تحصیل دروش میں بجلی کی ناروا لوڈ شیڈنگ کے خلاف بھرپور عوامی احتجاج شروع ہوگیا ہے۔ ویلج کونسل فورم دروش کی کال پر ہونے والے اس احتجاج میں تجار یونین، ڈرائیور یونین سمیت تمام سیاسی جماعتوں کے ذمہ داران نے بھی حصہ لیاہے، عوام کی ایک بڑی تعداد دروش بازار چوک میں جمع ہے اور مظاہرین نے چترال پشاور روڈ کو بند کردیا ہے۔ احتجاجی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ دروش میں ناروا لوڈ شیڈنگ نا قابل برداشت ہے، ہم نے کئی ایک فورمز پر اس حوالے سے مطالبہ کیا، اعلیٰ حکام سے درخواست کی کہ غیر اعلانیہ اور ناروا لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کیا جائے مگر کسی نے ہمارے مطالبے پر توجہ نہیں دی، اور آج عوام دروش کو مجبوراً اس شدید گرمی میں سڑکوں پر آنا پڑا۔ مقررین نے کہا عجیب ستم ظریفی ہے کہ وافر مقدار میں بجلی دستیاب ہونے کے باوجود لوڈ شیڈنگ کرکے عوام کو اذیت دی جارہی ہے مگر پوچھنے والا کوئی نہیں۔ احتجاج کے حوالے سے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ویلج کونسلز فورم کے ترجمان اور ویلج کونسل شاہنگار کے چیئرمین وقار احمد نے کہا کہ اسوقت دروش میں 10سے 12گھنٹے لوڈ شیڈنگ ہورہی ہے، لوڈ شیڈنگ کا کوئی شیڈول نہیں، غیر اعلانیہ اور طویل لوڈشیڈنگ نے عوام کا جینا دوبھر کردیا ہے، ہمارا احتجاج اس ظالمانہ اقدام کے خلاف ہے، انہوں نے کہا کہ چترال میں بجلی کی کوئی کمی نہیں، بجلی وافر مقدار میں دستیاب ہے، اسکے باوجود دروش میں بے تحاشا اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے جوکہ غیر قانونی اور بلا جواز ہے۔ انہوں نے کہا کہ بار بار انتظامیہ اور واپڈا والوں کیساتھ اس بابت بات چیت کی گئی، آج سے کئی دن پہلے ہم نے احتجاج کی کال دی مگر اس کے باوجود مسئلہ حل نہیں ہوا اور عوام کو مجبوراً سڑکوں پر آنا پڑا۔
دروش چوک میں موجود احتجاجی مظاہرین سے اسسٹنٹ کمشنر دروش عبدالحق نے بھی خطاب کیا اور کہا کہ ضلعی انتظامیہ دروش میں لوڈ شیڈنگ کے مسئلے کو حل کرنے کے لئے اقدامات اٹھائے گی، انہوں نے مظاہرین پر زور دیا کہ عوامی مشکلات کے پیش نظر چترال پشاور روڈ کو کھولا جائے۔ اسسٹنٹ کمشنر دروش عبدالحق اور عمائدین کے درمیان لوڈ شیڈنگ کے حوالے سے میٹنگ منعقد بھی ہوئی جس میں واپڈا کے ایس ڈی او اور دروش گرڈ کے انچارچ بھی موجود تھے۔ میٹنگ کے بعد ویلج کونسل فورم کے ترجمان وقار احمد نے میڈیا کو فون پر بتایا کہ مذاکرات کے بعد یہ حتمی فیصلہ ہوا ہے کہ دروش میں آئندہ کے لئے شیڈول کے مطابق روزانہ صرف 2گھنٹے لوڈ شیڈنگ ہوگی۔ اس حوالے سے عمائدین اور انتظامیہ کے درمیان ایک معاہدہ بھی طے پایا۔
طے پانے والے معاہدے پر واپڈ ا کی طرف سے ایس ڈی او اور گرڈ اسٹیشن کے دستخط کردئیے جبکہ عوامی کمیٹی کی طرف سے رضیت باللہ، عمران الملک، عبدالقادر اور وقار احمد نے دستخط کئے ہیں۔ معاہدہ طے ہونے کے بعد مظاہرین پر امن طور پر منتشر ہوگئے اور بند سڑکیں بھی کھول دی گئِیں۔