بدھ. جون 29th, 2022

چترال(گل حماد فاروقی) جمعیت علماء اسلام کے کارکنوں کا ایک اجلاس دارالعلوم قاسم العلوم دروش میں منعقد ہوا جس میں تحصیل دروش سے تعلق رکھنے والے جمعیت علماء اسلام کے کارکنوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ اجلاس میں جمعیت علماء اسلام کی طرف سے تحصیل دروش کی چیئرمین کی نشست کیلئے نامزد امیدوار سابق ناظم شیر محمد کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا گیا۔ بعد ازاں پارٹی کارکنوں نے امیر جمعیت علمائے اسلام تحصیل دروش مولانا امین احمد، جنرل سیکرٹری قاری فضل حق، سالار جمعیت صلاح الدین طوفان،سابق ناظم مولانا انعام الحق، مفتی محمود الحسن اور دیگرراہنماؤں کی قیادت میں ایک جلوس نکالا مین بازار سے گزرتے ہوئے حیدر عباس مارکیٹ میں مولانا امین احمد کی صدارت میں ایک جلسہ کی شکل اختیار کر لیا۔ جلسہ سے خطا ب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ تحصیل دروش کے تمام علماء، طلباء اور عوام بھی حاجی شیر محمد کے ساتھ کھڑے ہیں اور ہمارا ووٹ بھی صرف اور صرف شیر محمد کے حق میں استعمال ہوگا۔ انہوں نے جمیعت علمائے اسلام کے مرکزی اور صوبائی قیادت سے پر زور مطالبہ کیا کہ وہ بھی عوامی جذبات کی قدر کرتے ہوئے فوری طور پر پارٹی کا ٹکٹ شیر محمد کو جاری کرے ورنہ عوام اسے آزاد حیثیت سے بھی کامیاب کرکے دکھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے پہلے بھی شیر محمد آزاد امیدوار کی حیثیت سے ناظم کے حیثیت سے کامیاب ہوا تھا جس پر اسے کروڑوں روپے کی پیشکش بھی آئی مگر انہوں نے وہ پیشکش ٹھراتے ہوئے جمعیت میں غیر مشروط طور پر شمولیت کا اعلان کیا۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ یہ ٹکٹ شیر محمد کا حق ہے اور اگر اسے اس حق سے محروم کیا گیا تو یہاں کے ہزاروں لوگ اس کے حق میں اپنا ووٹ استعمال کرکے اسے آزاد حیثیت سے کامیاب کرکے دکھائیں گے۔ جلسہ سے قاری فضل حق، صلاح الدین طوفان، مفتی محمود الحسن، مولانا امین احمد وغیرہ نے اظہار خیال کیا۔
جلسہ سے اظہار خیال کرتے ہوئے تحصیل دروش کے چئیرمین کے امیدوار شیر محمد نے کہا کہ میں نے پہلے بھی عوام کیلئے قربانی دی ہے جس کے باعث مجھ پر دہشت گردی کا دفعہ بھی لگایا گیا ہے اور میں عوام کی خاطر جیل بھی جاچکا ہوں۔ اس بار اگر مجھے موقع ملے تو میں اللہ تعالیٰ سے وعدہ کرتا ہوں کہ اپنے عوام کے ساتھ کبھی بھی غداری نہیں کروں گا۔ انہوں نے کہا کہ تحصیل دروش ایک تاریخی قصبہ ہے مگر بدقسمتی سے یہ بہت پسماندہ رہ گیا۔ اگر مجھے اللہ نے موقع دیا تو میں یہاں کی گلی کوچے، نالیاں، سڑکیں، کھیل کے میدان وغیرہ درست کرکے یہاں صاف پانی کی فراہمی کو یقینی بناؤں گا۔