بدھ. ستمبر 28th, 2022

چترال(گل حماد فاروقی) سینگور کے مقام پر زیر تعمیر فائیو سٹار ہوٹل (بی جان) کی تعمیر پر شروع دن سے تنازعہ چلتا آرہا ہے۔ پہلے اس کی زمین پر جھگڑا اور اب مقامی لوگوں نے بھی عدالت سے رجوع کرلیا۔ اہالیان گانکورینی نے مقامی عدالت میں ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے سابق صدر ساجد اللہ ایڈوکیٹ کے توسط سے کیس دائیر کیا تھا۔مقامی لوگوں کا موقف ہے کہ بی جان ہوٹل کی کھڑکیاں وغیرہ ان کے گھروں کی طرف کھلتی ہیں جس سے ان کی پرائیویسی اور پردہ بری طرح متاثر ہورہا ہے۔
مقامی لوگوں نے ساجد اللہ ایڈوکیٹ کے ذریعے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ ان کے گھروں کی طرف ہوٹل کی کھڑکیاں کھولنا غیر قانونی ہے اور ایسا کرنے سے چادر اور چاردیواری کی تقدس بری طرح متاثر ہورہی ہے، اس عمل سے علاقے کے خواتین اپنے گھرو ں میں محصور ہوکر رہ گئے ہیں۔ علاوہ ازیں ہوٹل کی تعمیر میں بھاری مشینری کام کرتی ہیں جس میں سارے غیر مقامی ٹھیکیدار، مستری اور مزدور کام کرتے ہیں جبکہ کام شروع کرنے سے پہلے مقامی لوگوں کے گھروں کی پردے کا انتظام نہیں کیا گیا ہے۔ عدالت نے دائر کردہ درخواست منظور کر کے حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے مدعیان کی پردے کا بندوبست کئے بغیر تعمیرات کو 14 دن کیلئے روک دیا ہے۔
ساجد اللہ ایڈوکیٹ نے ہمارے نمائندے کو حکم امتناعی کے کاغذات دکھاتے ہوئے بتایا کہ گان کورینی کے لوگوں کا موقف حق بجانب ہے کیونکہ بی جان ہوٹل میں کراچی اور پنجاب کے لوگ کام کررہے ہیں جبکہ ہوٹل کی تعمیر کے بعد اس کی بالائی منزل کی کھڑکیاں بھی مقامی لوگوں کے گھروں کی جانب کھولے گئے ہیں جس سے ان کا پردہ بری طرح طرح متاثر ہوگا یہی وجہ ہے کہ مقامی لوگوں نے عدالت سے رجوع کرکے حکم امتناعی حاصل کی اور کام کو عدالت کے حکم پر چودہ دنوں کیلئے رکھوادیا گیا۔