63

علامہ محمد غفران اور ریاست چترال کی تاریخ اور طرز حکمرانی پر دو مختلف کتب کی تقریب رونمائی منعقد ہوئی

چترال(گل حماد فاروقی) معروف سکالر ڈاکٹر عنایت اللہ فیضی اور ڈاکٹر مفتی یونس خالد کی کتابوں کی ایک ساتھ تقریب رونمائی گذشتہ دنوں ڈسٹرکٹ کونسل ہال چترال میں ہوئی۔ یونیورسٹی آف چترال کے پراجیکٹ ڈائریکٹر ڈاکٹر بادشاہ منیر بخاری تقریب کے مہمان خصوصی تھے جبکہ پروفیسر اسرارالدین نے صدارت کی۔ چترال کے حوالے سے ان اہم کتب کے رونمائی کا اہتمام مادری زبانوں میں تعلیم اور تحقیق کے حوالے سے قائم ادارے MIERنے کیا تھا۔ ان میں سے ایک کتاب چترال کے اہم علمی شخصیت علامہ محمد غفران کے بارے میں ڈاکٹر عنایت اللہ فیضی نے تحریر کی ہے جبکہ دوسری کتاب ڈاکٹر مفتی یونس خالد نے ریاست چترال کی تاریخ اور طرز حکمرانی پر تحریر کی ہے۔ اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ علامہ محمد غفران ریاست چترال کے نامی گرامی شخصیت تھے جن کی پیدائش 1856؁ء میں ہوئی تھی اور 13سال کی عمر میں حصول تعلیم کی خاطر والدین سے جدا ہو کر ہندوستان کے سفر پر روانہ ہوئے۔ علامہ محمد غفران اس وقتت کے حکمران یعنی مہتر چترال کے ہاں بھی نہایت مقبول تھے اور ریاست کے زیادہ تر امور ان کی مشاورت سے طے ہوتھے۔ انہوں نے اس زمانے میں علم حاصل کیا جس وقت یہاں علم کی حصول کا نہ کوئی بندوبست تھا اور نہ کوئی تصور کرسکتا تھا۔
مقررین نے چترال کی تاریخ کے اہم علمی شخصیت کے بارے میں کتاب کی تحریر پر ڈاکٹر عنایت اللہ فیضی کی کاؤش کو سراہتے ہوئے اسے ایک عظیم علمی کارنامہ سرانجام دیا۔


چترال کے تاریخ کے حوالے سے دوسری کتاب ڈاکٹر مفتی محمد یونس خالد کی لکھی ہوئی ہے جنہوں نے ریاست چترال کی تاریخ اور طرز حکمرانی پر قلم اٹھایا ہے۔ ان کتابوں پر مقررین نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ان کتابوں کی تحریر میں کافی باریک بینی سے کام لیا گیا ہے اور لغت، زبان، سائنسی طریقے سے تصدیق وغیرہ کا بھی خیال رکھا گیا ہے۔ انہوں نے دونوں کتابوں کو نوجوان نسل کیلئے مشعل راہ قراردیا کہ آج کا نوجوان زیادہ تر وقت سوشل میڈیا پر صرف کرنے کی بجائے اگر ان تاریخی کتابوں کو پڑھ لے تو ان سے بہت کچھ سیکھا جاسکتا ہے۔
تقریب سے گورنمنٹ ڈگری کالج کے پرنسپل پروفیسر ممتاز حسین، مولانا حبیب اللہ، قاری جمال عبد الناصر، پروفیسر نقیب اللہ رازی، ضلعی نائب ناظم مولانا عبد الشکور، شہزادہ تنویر الملک ایڈوکیٹ، ڈاکٹر محمد یونس خالد، پروفیسر ڈاکٹر بادشاہ منیر بخاری، پروفیسر اسر ارالدین، مولانا خلیق الزمان خطیب شاہی مسجد،فرید احمد ماہر لسانیات، مولانا حسین احمد وغیرہ نے اظہار خیال کیا۔ دونوں کتابوں کی تقریب رونمائی میں کثیر تعداد میں لوگوں نے شرکت کی۔