10

شہزادہ ولیم اور شہزادی کیٹ میڈلٹن کا ایک روزہ دورہ چترال،بروغل اور بمبوریت بھی گئے

چترال(نامہ نگار) شہزادہ ولیم اور شہزادی کیٹ میڈلٹن نے بدھ کے روز چترال کا ایک روزہ دورہ کیا جس میں انہوں نے قدیم ترین تہذیب کے حامل کالاش وادی بمبوریت اور ضلعے کے انتہائی شمال میں واقع علاقہ بروغل بھی گئے جہاں پر انہوں نے شکست وریخت سے دوچار گلیشیر کا قریب سے نظارہ کیا جوکہ موسمیاتی تبدیلی کے نتائج میں سے ایک ہے۔

شاہی جوڑا کا چترال ائرپورٹ پہنچنے پر جی او سی ملانڈ ڈویژن،کمشنر ملاکنڈ،ڈی آئی جی ملاکنڈ ڈویژن،ڈی سی چترال اور ڈی پی او چترال نے اُن کااستقبال کیا اور علاقے کے بارے میں مختصر بریفنگ کے بعد بروغل وادی کا دورہ کیا جہاں انہیں گلیشیر وں میں ٹوٹ پھوٹ کے حوالے سے ماہرین نے بریفنگ دی۔ انہیں بروغل علاقے کی اہمیت کے بارے میں بتایاگیا جوکہ دس سے زیادہ گلیشیروں پرمشتمل ہے اور جہاں مقامی لوگ اب تک زندگی کی جدید سہولیات سے محروم چلے آرہے تھے۔

بعدازاں بمبوریت میں ایم پی اے وزیر زادہ اور مقامی عمائدین نے شاہی جوڑے کا پرتپاک استقبال کیا۔ بمبوریت میں شاہی جوڑے نے 2015 کی سیلاب کی تباہ کاریوں کا معائنہ کیا جس میں انہیں بتایا گیا کہ موسمیاتی تبدیلی کی وجہ سے بمبوریت جیسی دوسرے وادی قدرتی آفات کے زد میں ہیں۔ شاہی جوڑے نے کالاش ثقافتی پروگرام میں گہری دلچسپی لی اور بعدازاں عام لوگوں میں گھل مل گئے اور ان کے ساتھ گفتگو کی جوکہ کئی منٹوں تک جاری رہا۔

مقامی کمیونٹی نے انہیں آغا خان ڈیویلپمنٹ نیٹ ورک کے کاموں کے بارے میں بتایاجوکہ ان علاقوں میں جاری ہیں اور جن کی وجہ سے معیار زندگی بہتری کی طرف جارہی ہے۔شاہی مہمانوں کو علاقے میں وائلڈ لائف سے متعلق بھی بتایا گیا جس میں انہوں نے دلچسپی کا مظاہرہ کیا اور جنگلی حیات کی تحفظ وبقاء پر زور دیا۔ چترال میں ایک مصروف ترین دن گزارنے کے بعد برطانوی شہزادہ اورشہزادی اسلام آباد چلے گئے۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ 1990ء کے عشرے میں برطانوی شہزادہ لیڈیا ڈیانا نے بھی چترال کا دورہ کیا تھا۔