چترال پولیس کی پہلی مرتبہ موک ایکسرسائز،ایلیٹ فورس اور پولیس اہلکاروں نے حصہ لیا

چترال(بشیرحسین آزاد)چترال پولیس نے گذشتہ دنوں پہلی مرتبہ سطح سمندر سے 9500فٹ بلندی پر’’موک مشقیں‘‘کی جنکا مقصد پولیس فورس کو کسی بھی قسم کے حالات سے نمبرد آزما ہونے کے لئے ہر طور تیار کرنا تھا۔تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز چترال پولیس نے ڈی پی او محمد فرقان بلال کی ہدایت پرشغور میں سطح سمندر سے 9500فٹ کی بلندی اور کم از کم ایک فٹ برف کے اوپر موک مشقیں کی جنکی نگرانی ایس ڈی پی او گرم چشمہ عبدالستار نے کی ۔ موک ایکسر سائز میں پولیس کے جوانوں ،ایلیٹ فورس اور پراجیکٹ کی سیکیورٹی نے حصہ لیا اور کسی بھی ہنگامی صورت میں تیز ترین ایکشن کے ذریعے جانی و مالی نقصانات سے بچنے کے حوالے سے اپنے پیشہ وارانہ مہارت اور تربیت کا بھر پور مظاہرہ کیا ۔ موک ایکسر سائز کے موقع پر پی ایس او ٹو ڈی پی او چترال امان اللہ ، ایلیٹ فورس کے انچارج ابرار اور ایس ایچ او تھانہ شغور صادر ولی نے اپنی ٹیم کے جوانوں کی قیادت کی اور موثر ایکشن سے متعلق ہدایات دیں۔ چترال اگرچہ ملک کے دوسرے حصوں کے مقابلے میں ایک پُر امن ضلع ہے تاہم چترال کے سیکیورٹی ادارے اپنی ذمہ داریوں کو احسن طریقے سے انجام دینے سے غافل نہیں ہیں ۔ اور مسلسل تربیت کی ریہرسل کرکے کسی بھی ناخوشگوار حالات سے نمنٹنے کیلئے عملی اقدامات اُٹھانے پر یقین رکھتے ہیں۔ خصوصاً غیر ملکیوں کا تحفظ ان کی اولین ترجیح ہے ۔ اس لئے تمام پراجیکٹس پر جانی و مالی نقصانات سے بچنے اور تحفظ کو بہتر بنانے کیلئے سیکیورٹی کے انتظامات کو ہائی الرٹ کر دیا گیا ہے ۔ ڈی پی او چترال محمد فرقان بلال نے اپنے پیغام کہاہے کہ چترال ایک پُر امن ضلع ہے لیکن ہمیں کسی بھی صورت اپنی تیاری سے غافل نہیں ہونا چاہیے اور غیر ملکیوں کا تحفظ ہماری اولین ترجیح ہے ۔