ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن لوئر چترال کی تقریب حلف برداری، ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نے حلف لیا، ڈپٹی کمشنر تقریب کے مہمان خصوصی تھے

نو منتخب کابینہ کے اراکین سے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج خالد خان نے حلف لیا

اشتہارات

چترال (چ۔پ ) ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن لویر چترال کے عہدیداروں نے ہفتے کے روزڈسٹرکٹ بار روم میں منعقدہ تقریب میں اپنے عہدوں کا حلف اٹھالیا جس میں ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج لوئر چترال خالد خان نے ان سے حلف لیا جبکہ ڈپٹی کمشنر محمد عمران خان اس موقع پر مہمان خصوصی تھے۔ حلف اٹھانے والوں میں صدر ساجد اللہ ایڈوکیٹ، نائب صدر محمد کوثر چغتائی،جنرل سیکرٹری نبیک، فنانس سیکرٹری فیصل کمال، لائبریری سیکرٹری ظفرالحق اور ایگزیکٹو ممبرز راحت علی، سردارعلی، سلیم سرور اور ہدایت الاسلام شامل ہیں۔ اپنے مختصر خطاب میں ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج خالد خان نے اس اہم تقریب میں شرکت کا موقع دینے پر وکلاء برادری کا شکریہ ادا کیا۔ ڈی سی محمد عمران خان نے انصاف کی فراہمی میں بار کے کردار کو سراہتے ہوئے کہاکہ وکلاء کسی بھی معاشرے میں نمایاں حیثیت کے حامل ہوتے ہیں جوکہ سوسائٹی کو لیڈ کرنے کی پوزیشن میں ہوتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اپنی مدت ملازمت کے دوران اپنی ہر ایک جائے تعیناتی میں بار کے ساتھ ایک دوستانہ تعلق کو برقرار رکھا اور کسی بھی پیچیدہ صورت حال درپیش ہونے پر ان سے رہنمائی حاصل کرتے رہا ہوں۔ انہوں نے ضلعی انتظامیہ کی طرف سے وکلاء کو یقین دلایاکہ لائبریری سمیت ان کے تمام مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی کوشش کی جائے گی۔
اس سے قبل صدرساجد اللہ ایڈوکیٹ نے اپنے خطاب میں وکلاء برادری کو درپیش مسائل بیان کیا اور ڈسٹرکٹ بار کے لئے جدید لائبریری کی قیام میں ضلعی انتظامیہ کی طرف سے تعاون کو ناگزیر قرار دیا۔ انہوں نے بار اور بنچ کے درمیان بہتر تعلق کارپرزور دیا اور اسے انصاف کے آسان فراہمی کے لئے لازمی قرار دیا۔ انہوں نے اس سلسلے میں ڈسٹرکٹ بار روم میں لیگل کمپلینٹ سنٹر اور لیگل ڈیسک کے قیام کا بھی ذکر کیا۔انہوں نے کہاکہ ہفتہ وار بنیادوں پر ڈسٹرکٹ بار روم میں ایک لیگل ڈیبیٹ کا اہتمام کیاجائے گا جس میں وکلاء کو قانونی موضوعات کے ساتھ ساتھ سماجی ایشوز پر بھی اظہار خیال اور معلومات حاصل کرنے کا موقع ملے گا۔ بعدازاں ڈی۔سی نے بار روم کی لائبریری کو فعال بنانے کے کام کا افتتاح کیا۔ تقریب میں سینئر وکلاء امیرگلاب خان، صاحب نادر خان، عبدالولی خان عابد، فضل رحیم، سفیر اللہ، ظفر حیات، ایم۔آئی خان سرحدی، سیدجلا ل موجود تھے۔

#Chitralpost