بدھ. ستمبر 28th, 2022

چترال(محکم الدین)تریچمیر ڈرائیور یونین چترال کے انتخابات میں اخلاق حسین بلا مقابلہ صدر منتخب ہو گئے ہیں کیونکہ ان کے مقابلے میں کسی بھی امیدوار کی طرف سے کاغذات نامزدگی داخل نہیں کئے گئے۔ اس امر کا اعلان یونین کے عبوری صدر اور الیکشن کمشنر تریچ میر ڈرائیور یونین چترال حاجی محمد یوسف نے چترال پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ڈرائیور یونین کے سرکردہ رہنما محمد افضل لال، ریٹائرڈ صوبیدار زاہد خالق اور بڑی تعداد میں ڈرائیور برادری کے افراد موجود تھے۔ حاجی محمد یوسف نے کہاکہ سابق صدر صابر احمد کی صدارت کی مدت پوری ہونے کے بعد ان سے نئے الیکشن منعقد کرانے کا مطالبہ کیا گیا تھا جس پر انہوں نے ہٹ دھرمی کرتے ہوئے کافی عرصے تک بات ان سنی کردی جس پر ہمیں مجبورا ًعدالت کا سہارا لینا پڑااور سیشن جج چترال کی عدالت نے بالآخر نئے انتخابات کرنے کے احکامات صادر کئے لیکن صابراحمد پھر بھی عدالتی احکامات کو پس پشت ڈال کر انتخابات سے جی چراتے رہے۔ جس پر اپیل کی مقررہ مدت گزرنے کے بعد بطور عبوری صدر و الیکشن کمشنر میں نے اپنی زیر نگرانی نئے الیکشن کا اعلان کیا اور اشتہارات کے ذریعے انتخابات میں صدارت کے خواہشمند امیدواروں سے درخواستین طلب کیں لیکن مقررہ تاریخ تک اخلاق حسین کے علاوہ کسی نے بھی بطور امیدوار صدارت کیلئے کاغذات نامزدگی داخل نہیں کی۔ اس لئے قاعدہ اور قانون کے مطابق اخلاق حسین تریچ میر ڈرائیوریونین چترال کے بلامقابلا صدر منتخب ہو گئے ہیں جو ڈرائیور یونین کے بائی لاز کے مطابق آئندہ تین سال تک تریچمیر ڈرائیور یونین کے صدر رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سابق صدر صابر احمد کو عدالت نے یہ موقع فراہم کیا تھا کہ وہ بھی نئے الیکشن میں بطور امیدوار حصہ لے سکتے ہیں لیکن انہوں نے عدالت کی طرف سے دئیے گئے اس رعایت سے بھی فائدہ نہیں اٹھایا اور الیکشن میں حصہ ہی نہیں لیا۔ اس موقع پر بلامقابلا صدر قرار پانے والے اخلاق حسین کو ہار پہنائے گئے اور مبارکباد دی گئی۔
نومنتخب صدر نے اس موقع پر اپنے خطاب میں انتخابی عمل کی انجام دہی پر عبوری صدر اور کابینہ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ یہ سارا عمل عوام کو ریلیف پہنچانے کی غرض سے ہو رہا ہے۔ سابق صدر صابر احمد صدارت کا عہدہ لینے کے بعد اڈہ مالک بن گیا تھا اور انکی ڈرائیور برادری کے مسائل سے کوئی دلچسپی نہیں رہی تھی جبکہ قانونی طور پر ڈرائیور یونین کا صدر اڈہ نہیں چلا سکتا لیکن انہوں نے اس کی کوئی پرواہ نہیں کی۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ ڈرائیوروں کے مسائل پربھر پور توجہ دی جائے گی۔