85

اپرچترال کے علاقے نیشکوہ میں طویل واٹر سپلائی اسکیم تکمیل کے آخری مراحل میں داخل

چترال(گل حماد فاروقی) اپر چترال کے گاؤں نشکو میں طویل پائپ لائن کی تنصیب کا کام مکمل ہو گیا جس سے علاقے کے لوگوں کو پینے کا صاف پانی فراہم ہوگا۔یہ منصوبہ محکمہ پبلک ہیلتھ نے مکمل کرلیا ہے۔ پبلک ہیلتھ کے انجینئر آصف کے یہ سب سے طویل پائپ لائن ہے جسکی لمبائی 45000 فٹ ہے اور اسکیم پر چار کروڑ روپے کی لاگت آئی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس سکیم کا ٹنڈر 2015 میں ہوا تھا مگر علاقے کے لوگوں کا آپس میں رنجشوں اور باہمی ختلافات کی وجہ سے اس پر کئی بار کام روک دیا گیا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اس سکیم کی کامیابی کیلئے سیکرٹری پبلک ہیلتھ اور اعلےٰ افسران بھی آئے تھے مگر بعض لوگ اپنے زمین سے یہ پائپ لائن گزارنے نہیں دے رہے تھے اس اسکے عوض ملازمت کا تقاضا کر رہے تھے تاہم علاقے کے معززین کا جرگہ تشکیل دیا گیا جسکی وجہ سے ی مسئلہ خو ش السلوبی سے حل ہوا۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ پانی ایک ندی سے نکل کر آتا ہے مگر ٹینکی کی تعمیر میں نقائص کا نوٹس لیکر اسے دوبارہ بنانے کی ہدایت کی گئی اور اب پانی ٹینکی میں گرتا ہے اور اگلے چند ہفتوں میں یہ پانی پائپ لائن کے ذریعے گھر گھر تک پہنچایا جائے گا۔ علاقے کے ایک بزرگ شہری اعظم خان نے بتایا کہ اس سے پہلے ہم دریا کا گدلا پانی پینے پر مجبور تھے اور ہمارے خواتین دور دراز علاقوں سے برتنوں میں پانی لایا کرتی تھی اب اس سکیم سے ہمیں قدرے سکون نصیب ہوگا اور ؤسانی سے پانی دستیاب ہوں گی۔اس علاقے کے جامع مسجد کے پیش امام نے بھی اس منصوبے کی تکمیل پر خوشی اور اطمینان کا اظہار کیا کہ ستر فی صد کام مکمل ہوا ہے اور صرف تیس فی صد کام باقی ہے جس میں پائپ لاین کو مختلف جگہوں میں سیدھا کرنا، اسے مٹی میں چھپانا، اور پائپ لائن کے ذریعے گھروں تک پانی پہنچانا اور اسکے ساتھ ہی جہاں سے پانی آتا ہے اس ندی اور ٹینکی کی مرمت کرنے کے بعد یہ منصوبہ مکمل ہوگا۔
اس موقع پر تعمیراتی کمپنی کے چیف ایگزیکٹیو حاجی محبوب اعظم نے عوام کو ٹیلیفون کے ذریعے اپنے پیغام میں بتایا کہ خدا راا پنی باہمی اختلافات کو ختم کریں اور مل بیٹھ کر اس منصوبے کو کامیاب کریں۔ انہوں نے یقین دہانی کرائی کہ جب تک یہ منصوبہ مکمل نہیں ہوتا اور گھر گھر تک پانی نہیں پہنچتا وہ چین سے نہیں بیٹھیں گے اور اگر اسے خسارہ بھی اٹھانا پڑا تب بھی یہ کام مکمل کیا جائیگا مگر عوام سے درخواست ہے کہ مخالفت برائے مخالفت سے گریز کریں اور اس منصوبے کی کامیابی کیلئے دعا کرے۔
علاقے کے لوگوں نے محکمہ پبلک ہیلتھ اور تعمیراتی کمپنی کے چیف ایگزیکٹیو کا شکریہ ادا کیا اور امید ظاہر کی کہ اگلے چند ہفتوں میں یہ منصوبہ مکمل ہوکر ان کے گھروں تک پینے کا صاف پانی پہنچے گی۔ واضح رہے کہ اس علاقے میں پینے کی پانی کی شدید قلت ہے اور لوگ دریا کا گدلا پانی پینے پر مجبور تھے۔